اہلیہ پر تشدد کاالزام ،بھارتی کرکٹر محمد شامی کی سالگرہ پر ان کے وارنٹ گرفتاری جاری

کولکتہ ویسٹ انڈیز کے دورے پر جانے والی انڈین ٹیم میں شامل فاسٹ بولر محمد شامی کو انڈین کرکٹ بورڈ کے ٹوئٹر ہینڈل سے ان کی یوم پیدائش کے موقعے پر منگل کی صبح مبارکباد دی گئی ہے لیکن ہزاروں میل دور کولکتہ میں ان کے وارنٹ گرفتاری بھی جاری کر دیے گئے ہیں۔گذشتہ ڈیڑھ سال سے شامی خبروں میں نظر آئے ہیں اور زیادہ تر غلط وجوہات کے سبب ہی ایسا ہے۔پہلے ان کے خلاف میچ فکسنگ کے الزامات لگے پھر ان کی اہلیہ حسین جہاں نے شامی اور ان کے بھائی کے خلاف گھریلو تشدد اور مار پیٹ کی شکایت درج کی۔اب اہلیہ کی جانب سے دائر گھریلو تشدد کے ایک معاملے میں کولکتہ کی علی پور عدالت نے شامی اور ان کے بھائی کے خلاف وارنٹ گرفتاری جاری کیے ہیں۔شامی کے انڈین ٹیم کے ساتھ ویسٹ انڈیز کے دورے پر ہونے کی وجہ سے عدالت نے انھیں خود سپردگی اور ضمانت کی درخواست دائر کرنے کے لیے 15 دن کی مہلت دی ہے جبکہ ان کے بھائی کے خلاف وارنٹ پر فوری عمل کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔دوسری جانب بی سی سی آئی نے کہا ہے کہ وہ چارج شیٹ دیکھنے کے بعد ہی اس معاملے پر کوئی فیصلہ کرے گی۔ بی سی سی آئی کے ایک عہدیدار نے کہا کہ ایسا لگتا نہیں ہے کہ اس پر فوری کارروائی کی ضرورت ہو۔ چارج شیٹ دیکھنے کے بعد اس معاملے میں فیصلہ لیا جائے گا۔حسین جہاں کی جانب سے دائر کردہ مقدمے کی سماعت کے دوران عدالت کی ہدایت کے باوجود شامی عدالت کے روبرو پیش نہیں ہوئے اسی وجہ سے اس کے خلاف وارنٹ جاری کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔حسین کے وکیل انیروان گوہا ٹھاکرتا نے کہا کہ اس معاملے میں شامی ایک بار بھی عدالت میں حاضری نہیں دی۔ لہذا ان کے اور ان کے بھائی ہاشب احمد کے خلاف وارنٹ جاری کیا گیا ہے۔ شامی کرکٹ کے سلسلے میں ملک سے باہر ہیں لہذا انھیں خود سپردگی کے لیے 15 دن کا وقت دیا گیا ہے۔ لیکن یہ قانون ان کے بھائی پر نافذ العمل نہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں