صوبہ بلوچستان کو بجلی کی لوڈشیڈنگ سے استثنیٰ دیا جائے،ٹڈی دل کی تباہی روکھنے کیلئے حکومت کو فوری عملی اقدامات اُٹھانے چاہیے، ڈاکٹرعطاء الرحمان

کوئٹہ: نائب امیر جماعت اسلامی بلوچستان ڈاکٹرعطاء الرحمان نے کہاکہ بلوچستان بھر میں سخت گرمی میں بجلی کی طویل لوڈشیڈنگ وآنکھ مچولی،پینے کے پانی کی قلت نے عوام الناس سمیت تاجروں،زمینداروں سمیت ہر طبقے کو شدید متاثر کیا انڈسٹری نہ ہونے،زرعی ٹیوب ویلزکی وجہ سے بلوچستان میں بجلی کا دیگر صوبوں کی نسبت بہت کم استعمال ہوتا ہے اس لیے صوبے کو بجلی کی لوڈشیڈنگ سے استثنیٰ دیا جائے۔ٹڈی دل کی تباہی روکھنے کیلئے حکومت کو فوری عملی اقدامات اُٹھانے چاہیے۔ان خیالات کا اظہار انہوں صوبائی دفتر میں کارکنان سے ملاقات کے دوران گفتگومیں کیا انہوں نے کہاکہ عوام الناس کرونا وائرس سے بچنے کیلئے احتیاطی تدابیر اختیار کریں اللہ سے رجوع میں ہی نجات ہے صفائی،سماجی فاصلے اور احتیاط کام لیکر ہم اپنی اور اپنے گھروالوں کی جان اس وائرس سے بچاسکتے ہیں جس نے بھی اللہ سے رجوع،احتیاط اور صٖفائی سمیت احتیاطی تدابیر اختیار کیاوہ اس وائر س سے بچ سکتا ہے۔بلوچستان کے اکثرعوام کا دارومدارس زراعت پر تھا اب ٹڈی دل اور ا س کیساتھ بجلی کی لوڈشیڈنگ نے زراعت کو تباہ کرکے رکھ دیا ہے زمیندار کسان سمیت ہر طبقہ نان شبینہ کے محتاج ہوگیے ہیں۔اکثرمنتخب نمائندوں وسیاسی پارٹیوں نے عوام سے بجلی لوڈشیڈنگ وبے روزگاری سے نجات کے وعدے پر ووٹ لیے تھے اب منتخب نمائندوں اور حکومت میں بیٹھے نمائندوں کو وہ وعدے ودعوے یادنہیں جس کی وجہ سے حالات اس نہج پر پہنچ گیے ہیں کہ دیہاتوں میں بیس گھنٹے اور شہروں میں دس سے بارہ گھنٹے کی لوڈشیڈنگ ہوتی ہے جس سے ہر طبقہ شدید متاثراور نظام زندگی شدید متاثرہواہے جماعت اسلامی عوامی مسائل پرآوازبلنداور حل کیلئے ہر پلیٹ فارم استعال کریگی عوام جماعت اسلامی کا ساتھ دیں تاکہ مسائل وپریشانیوں سے نجات ملے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں