بلوچستان کے وسائل کو بروئے کار لاکر صوبے اور ملک کے معاشی حالات بدلے جاسکتے ہیں، وزیراعلیٰ بلوچستان

دالبندین وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے کہاہے کہ بلوچستان کے وسائل کو بروئے کار لاکر صوبے اور ملک کے معاشی حالات بدلے جاسکتے ہیں، اگر ماضی کی حکومتیں ریکوڈک پراجیکٹ کا معاملہ درست طریقے سے نمٹاتے تو بین الاقوامی عدالت سے پاکستان پر بھاری جرمانہ نہ لگتا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے چاغی کے نوجوان سیاسی و قبائلی رہنما سردار زادہ میر عمیر محمدحسنی سے وزیر اعلی ہاس کوئٹہ میں ملاقات کے دوران کیا اس موقع پر سردارزادہ میر عمیر محمدحسنی نے وزیر اعلی بلوچستان کو چاغی سمیت رخشان ڈویژن کے مسائل سے آگاہ کرتے ہوئے ملک کی مجموعی سیاسی و معاشی صورتحال اور حالات حاضرہ سمیت مختلف امور پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا اور اپنی طرف سے دور دراز علاقوں کی ترقی کے لیے اقدامات کے سلسلے میں بلوچستان حکومت کو ہر ممکن تعاون کا یقین دلایا. اس موقع پر وزیر اعلی بلوچستان نے صوبے کی فلاح و بہبود اور اس میں دیرپا امن کے لیے نوجوان نسل کو مواقع فراہم کرنے کی ضرورت پر زور دیا. ملاقات کے دوران وزیر اعلی بلوچستان جام کمال خان کا کہنا تھا کہ بلوچستان بالخصوص ضلع چاغی قیمتی قدرتی معدنیات سے مالامال ہے اور بلوچستان حکومت ان وسائل کو بروئے کار لانے کے لیے پرعزم ہے تاکہ لوگوں کی معاشی حالت بہتر بنائی جاسکے. انہوں نے سردارزادہ میر عمیر محمدحسنی کو ضلع چاغی سمیت رخشان ڈویژن سمیت کے دیگر علاقوں میں جاری ترقیاتی منصوبوں کے متعلق آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ صوبائی حکومت دور دراز علاقوں میں لوگوں کو بنیادی سہولیات کی فراہمی کے لیے تمام دستیاب وسائل بروئے کار لارہی ہے. سردارزادہ میر عمیر محمدحسنی نے وزیر اعلی جام کمال خان کے خدمات کو سراہتے ہوئے کہا کہ بلوچستان کو پہلی بار ایسا نوجوان وزیر اعلیٰ ملا ہے جو صوبے کی مسائل کے تمام پہلوں سے آگاہی رکھتے ہوئے بلوچستان کو تیز رفتار ترقی کے دوڑ میں شامل کرنے کے لیے انتھک محنت کررہے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں