وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی اقوام متحدہ کے صدر جنرل اسمبلی تجانی محمد باندے سے ملاقات ، کشمیر کی بگڑتی ہوئی صورتحال سے آگاہ کیا

نیویارک (این این آئی) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ مقبوضہ جموں و کشمیر کے 80لاکھ کشمیریوں کو بھارتی جبرواستبداد سے نجات دلانے کیلئے اقوام متحدہ جنرل اسمبلی اور سیکورٹی کونسل جیسے عالمی اداروں کو اپنا موثر کردار ادا کرنا ہو گا ۔ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے نیویارک میں اقوام متحدہ کے صدر جنرل اسمبلی تجانی محمد باندے سے ملاقات کی جس میں اقوام متحدہ میں پاکستان کے مستقل مندوب ایمبسڈر منیر اکرم بھی اس ملاقات میں موجود تھے،دوران ملاقات، دونوں رہنماؤں کے مابین اہم علاقائی و عالمی موضوعات پر سیر حاصل گفتگو ہوئی۔اقوام متحدہ کے کردار کو سراہتے ہوئے وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا کہ موسمیاتی تبدیلی ، غربت سمیت مختلف چیلنجز سے نبردآزما ہونے اور دیرپا ترقی کے مشترک اہداف کے حصول کیلئے ٹھوس اقدامات اٹھائے کے حوالے سے اقوام متحدہ کا کردار ہمیشہ اہم اور ناگزیر رہا ہے ۔مخدوم شاہ محمود قریشی نے صدر اقوام متحدہ جنرل اسمبلی، کو عوام الناس کی فلاح و بہبود کے لیے وزیر اعظم عمران خان کی طرف سے شروع کئے گئے خصوصی منصوبوں احساس پروگرام اور صحت سہولت پروگرام کے خدو خال سے آگاہ کیا۔وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے صدر جنرل اسمبلی کے ساتھ دوران ملاقات، کرپشن کے خاتمے اور لوٹی ہوئی قومی دولت کو واپس لانے کیلئے بین الاقوامی سطح پر تعاون کے فروغ کی ضرورت پر زور دیاوزیر خارجہ نے تجانی محمد باندے کو بتایا کہ آج مقبوضہ جموں و کشمیر میں کرفیو کو 165 روز گزر چکے ہیں، نہتے کشمیریوں کو ظلم و بربریت کا نشانہ بنایا جا رہا ہے ۔ انہوںنے کہاکہ مقبوضہ جموں و کشمیر کے 80لاکھ کشمیریوں کو بھارتی جبرواستبداد سے نجات دلانے کیلئے اقوام متحدہ جنرل اسمبلی اور سیکورٹی کونسل جیسے عالمی اداروں کو اپنا موثر کردار ادا کرنا ہو گا۔وزیر خارجہ نے صدر اقوام متحدہ جنرل اسمبلی کو مشرق وسطیٰ میں کشیدگی کم کرنے کیلئے پاکستان کی جانب سے کی جانے والی کاوشوں سے بھی آگاہ کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں