گلبدین حکمت یار تین روزہ دورہ پراسلام آباد پہنچ گئے،وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی سے ملاقات

اسلام آباد(ویب ڈیسک) حزب اسلامی افغانستان کے سربراہ گلبدین حکمت یار تین روزہ دورہ پراسلام آباد پہنچ گئے۔ سابق افغان وزیراعظم کی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی سے ملاقات۔ وزیرخارجہ نے کہا کہ خطے کا امن و استحکام، افغانستان میں مستقل امن سے مشروط ہے۔ پاکستان خلوص نیت کے ساتھ افغان امن عمل میں اپنا مصالحانہ کردار ادا کر رہا ہے اور آئندہ بھی کرتا رہے گا۔ گلبدین حکمت یار اور وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کی ملاقات میں پاک افغان دوطرفہ تعلقات، افغانستان میں قیام امن کے لیے جاری بین الافغان مذاکرات سمیت باہمی دلچسپی کے امورپرتبادلہ خیال کیا گیا۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے واضح طورپر کہا تھا کہ افغان مسئلے کے دیرپا حل کا واحد راستہ، افغانوں کو قابل قبول سیاسی مذاکرات ہیں۔ خوشی ہے کہ آج عالمی سطح پرپاکستان کے موقف کو سراہا جا رہا ہے۔ بین الافغان مذاکرات کی صورت میں افغان قیادت کے پاس افغانستان میں امن کی بحالی کا ایک نادر موقع ہے۔ وزیرخارجہ کا کہنا تھا کہ پاکستان، افغانستان سمیت خطے میں قیام امن کیلئے اپنی کاوشیں جاری رکھے گا۔

گلبدین حکمت یارنے کہا کہ ہم پاکستان کواپنا دوسرا گھر سمجھتے ہیں۔ ترجمان دفترخارجہ کے مطابق حزب اسلامی افغانستان کے سربراہ گلبدین حکمت یار کا یہ دورہ، پاکستان اور افغانستان کے مابین وسیع تر دو طرفہ روابط کے فروغ کیلئے کی جانے والی کاوشوں کا اہم حصہ ہے۔ گلبدین حکمت یار19 سے21 اکتوبرتک پاکستان میں قیام کریں گے۔ افغان رہنما صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی، وزیراعظم عمران خان، چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی اور قومی اسمبلی کے سپیکر اسد قیصراور دیگراہم شخصیات سے بھی ملاقاتیں کریں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں