فواج پاکستان پر تنقیدکیوں ؟

تحریر: شہزاد افق
یہ لوگ آخر کیاچاہتے ہیں۔پچھلے دو دنوں سے ایک عورت کو لے کر شوشل میڈیا پر جو تماشہ جاری ہے۔ افواج پاکستان پر جو زہر اگلا جارہا ہے ،تو کہیںحکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا جارہا ہے،حتی کہ یہ لوگ انسانیت
سے اتنے گر چکے ہیں،کہ مولانا طارق جمیل صاحب تقریر اٹھا کر اس عورت کت ساتھ ملا ان کی ذات پر کیچڑ اچھالا جارہے۔افسوس کی بات یہ ہے کہ یہ لوگ ایسے شخص کو اپنی تنقید کا نشانہ بنا رہے ہیں جس نے ہمیشہ پیار، محبت ،انسانیت اور بھائی چارے کی بات کی ہے۔ان لوگوں کے جو حالات ہیں دیکھ اب تو یہی لگتا ہے،کہ انسانیت اب تو خود انسانیت ترس رہی ہے۔مجھ تو یہ سمجھ نہیں آتا حکومت سے بغض نفرت تنقید مان لیتے مولانا طارق جمیل صاحب سے کیسابغض ؟ اور افواج پاکستان سے نفرت کرنے ولا گروہ
نہ تو محب وطن ہو سکتا ہے نہ اس ملک کا خیرخواہ ہوسکتا ہے ۔ایسی نفرت آمیز تحریریںملک دشمن عناصر کی خواہش ہی ہوسکتی ہے ،کسی غیرت مند پاکستانی کے یہ الفاظ ہر گز نہیں ہوسکتے ۔ پاکستان میں رہنے والے ہر شہری کوتنقید کرنے کا حق حاصل مگر زہر اگلنے کانہیں۔میں توحیران رہ گیا یہ کیسا گروہ ہے جو کو اخلاقیات
سے کوسوں دور ہے۔میری سمجھ سے یہ بات بالاتر ہے کہ کیا افواج پاکستان میں بھرتی ہونے لوگ امریکہ
روس،اسرائیل یاپھر انڈیا سے بھرتی کیے جاتے ہیں ؟وہ کون لوگ ہیں آخر جن کے خلاف یہ طبقہ زہر اگل رہاہے ۔ کیا افواج پاکستان میں نوجوان ہم میں سے نہیں کیا ہمارا بھائی نہیں ہے ۔کوئی شرم ہوتی ہے
کچھ حیا ہوتا ہے۔ایسی پسماندہ سوچ کے مالک افراد خود غلامی کو دعوت دیتے ہیں۔مزے کی بات یہ ہے
یہ وہ انتشار پسند لوگ جوافواج پاکستان کےخلاف عوام کو لڑانا چاہتے ہیں۔مگر سوشل میڈیا پرمحب وطن عوام نے افواج پاکستان سے محبت کا ثبوت دیتے ہوئے ان اخلاق سے بدتر گرئے ہوئے طبقے کو منہ توڑ جواب دیا۔اس کے ساتھ اور ایسی کچھ اور ویڈیو بھی وائرل ہوئی ایک میں محترمہ عظمہ بخاری صاحبہ نے تو
حد ہی کردی اس ویڈیو میںایسی گالی گلوچ دی رہی کہ شرم سے ایک غیرت مند انسان شرم سے مرجائے
اور وہ عور ت کرنل کی بیوی ہے یہ کہ وکیل کی یہ ثابت نہیں ہوا مگر جو بھی ہے وہ عورت اس پر قانونی کاروائی ہوچکی ہے۔اس گروہ کا کاتعلق شاید کسی ملک دشن عناصر سے ہو سکتا ہے۔فرد واحد کی غلطی کی سزا بھی فرد واحد کو ملنی چاہیے نہ جس ادارے سے منسلک ہو اس پورے ادارے کے خلاف زہر اگلا جائے۔اسے لوگ ہدایت کی دعا کت قابل تو نہیں سزا اورعذاب الہی کے حقدار ضرور ہیں۔افواج پاکستان کے خلاف
دل ودماغ میں اتنی نفرت اور زہر رکھ یہ لوگ زندہ کیسے جی رہیں ۔یہ مجھے نفسیاتی مریض لگتے ہیں۔یہ احمق ،فاسق،بے ہودہ اور بے وقوف قسم کے لوگ ہیں۔یہ چندلوگوںپرمشتمل فسادی گروہ ہماری افواج پاکستان پر ایسے زہر اگل کرانہیں بدنا م نہیں کرسکتا ،جب تک اس ملک میں غیرت مند پاکستانی لوگ زندہ وہ اپنے محافظوں سے محبت کرنے والے ،آخر یہ گروہ کون ہے؟ جواپنی ہی افواج پاکستان کے خلاف اتنا نفرت آمیز لب ولہجہ استعمال کرتے سوشل میڈیا پر افواج پاکستان پر کیچڑ اچھالنے کی ناکام کوشش کرتے ہیں۔کیا یہ واقعی پاکستانی ہیں یا پھر پاکستانی عوام کے نام پر فیک آئی ڈی بنا کر ملک دشمن عناصر
ہیں۔ملک دشمن عناصر کی ہمیشہ سازش رہتی کہ عوام اور فوج کے درمیاں نفرت کی آگ کو ہوا دی جائے ،مگر
بدقسمتی سے اس سازش میں ہمیشہ دشمن ناکام رہا مگر افسوس اس بات کا ضرور ہیں کہ کچھ بے ضمیر لو گ اپنے
ملک میں رہتے ہوئے بھی اس ملک کے وفادار نہ ہوئے ہمیشہ ملک دشمن عناصر کے ہاتھوں کھیلتے رہے
اس سیاسی گروہ سمیت ہمارے چند مذہبی لوگ بھی اس بدنتی میں شامل رہے ہیں۔مگر ان چند لوگوں کی نفرت عوام اوراپنی فوج سے محبت کا رشتہ نہیں توڑ سکتی پاک افواج کا ہرجوان کل بھی ہمارا ہیرو تھا ،اور آج بھی ہمارا ہیرو ہے۔نفرت کی آگ جلانے والے خود اس میں جلتے رہیں گے ۔مگر پاک فوج اور عوام کی محبت کو نفرت میں نہیں بدل سکتے۔ کرنل کا نام استعمال کرکے جو نفرت کی آگ جلائی جارہی تھی وہ بجھ چکی
عوام کی محبت اورحب الاوطنی نے ان دشمن ملک عناصر جو ہمارے ملک کے امن تو تباہ کرنے کی سازش
رچا رہا تھا ۔عوام اور ہماری فوج نے مل انہیں دھول چٹا دی پاک فوج زندباد ،زندہ باد پائندہ باد

اپنا تبصرہ بھیجیں