پاکستان اور کشمیر کا ایک جسم اور روح کا رشتہ ہے، فردوس عاشق اعوان

اسلام آباد وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹرفردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ وزیراعظم عالمی برادری کو نریندر مودی کا اصل چہرہ دکھا رہے ہیں، پا کستان اور کشمیر کا ایک جسم اور روح کا رشتہ ہے، وزیراعظم کے دورہ امریکا میں مسئلہ کشمیر سرفہرست ہے، وزیراعظم عمران خان عالمی رہنما وں کو مقبوضہ کشمیر کی صورت حال سے آگاہ کر رہے ہیں وزیراعظم کا موقف ہے ہرصورت کشمیریوں کے ساتھ کھڑے ہوں گے۔تفصیلات کے مطابق معاون خصوصی فردوس عاشق اعوان نے کشمیر کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان اورکشمیر کا ایک جسم اور روح کا رشتہ ہے ، کشمیر پاکستان کا دفاعی حصار ہے انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان کے دورہ امریکہ میں مسئلہ کشمیر سر فہرست ہے جبکہ وزیر اعظم عالمی رہنمائوں کو مقبوضہ کشمیر کی صورتحال سے آگاہ بھی کر رہے ہیں، کشمی کاز کیلئے وزارت خارجہ نے فوکل ڈیسک قائم کیا ہے اس کا مقصد مشترکہ لائحہ عمل تیار کرنا ہے ،انہوں نے کہا کہ ہمیں فاشسٹ مودی کے چیلنج کو کیسے ہینڈل کرنا ہے اس کیلئے مشترکہ حکمت عملی کی ضرورت ہے ، وزیر اعظم دورہ امریکہ میں بھارت کا مکروہ اور سیاہ چہرہ دنیا کو دکھانے کی کوشش کر رہے ہیں ،عمران خان اقوام متحدہ کے اجلاس میں پاکستان کے عالمی تشخص کو بہتر بنانے کیلئے سفارتکاری میں بہترین کردار ادا کر رہے ہیں ، انہوں نے مزیدکہا کہ اتوار کی رات کو امریکی اسٹیبلشمنٹ اور صدر ٹرمپ مودی کے جلسے پر موجود تھے وہ مودی جسے گجرات کا قصاب کہا گیا جس کو امریکہ کا ویزہ نہیں مل سکتا تھا اور امریکہ آنے پر پابندی تھی لیکن وہ کون سا ایسا پیراڈائم شفٹ تھا جس کی بنا پر امریکہ صدر اور قاتل مودی کے ساتھ کھڑے تھے ،مظلوم اورنہتے کشمیریوں کے زخم پر نمک پاشی کی گئی انہوں نے کہا کہ دنیا یہ توقع کرتی ہے کہ دنیا کی سپر پاور وہاں کھڑی ہو جہاں لوگوں کی مذہبی آزادی اور آزادی اظہار رائے ،بنیادی انسانی حقوق کی بات ہو لیکن دنیا کی سپر پاور ایک قاتل کے ساتھ کھڑی نظر آئی اور اس کے پیچھے صرف اور صرف معاشی مصلحت ہے ، فردوس عاشق اعوان نے مزید کہا کہ میرا سیاسی حلقہ پانچ منٹ کی دوری پر ہے اور انٹرنیشنل بارڈر میرے حلقے سے ہو کر گزرتا ہے وہاں کی بیوائیں اور بیٹیاں مجھ سے اور میری حکومت سے یہی توقع رکھتی ہے کہ حکومت دو ٹوک پالیسی رکھے چاہے دنیا ساتھ کھڑی ہو یا نہ ہو،وزیر اعظم کشمیر کاز کو احسن طریقے سے انجام دے رہے ہیں ،اقوام متحدہ کا قیام کا مقصد دنیا میں مظلوم مملک کے ساتھ کھڑا ہونا تھا لیکن آج دیکھنا ہو گا کہ کیا اقوام متحدہ ایک خاموش تماشائی کا کردار ادا کر رہا ہے ،اقوام متحدہ کا اجلاس انتہائی اہمیت کا حامل ہے اس کے ذریعے بین الاقوامی سربراہوں کا ضمیر جھنجھوڑے گا اور دیکھناہو گا کہ کیا کشمیریوں کی آہ و سسکیاں ان کو نظر آتی ہے یا نہیں انہوں نے کہا کہ اگر دنیا اپنے اپنے بیانیے کو لے کر کھڑی ہو جائے گی تو انسانیت کے ساتھ نہیں ہونگے تو دنیا جنگل کی شکل اختیار کر سکتا ہے ،وزیر اعظم دنیا کو باور کرا رہے ہیں کہ کشمیر نیوکلیئر فلیش پوائنٹ ہے اور مودی جس طرح انسانیت کی تذلیل کر رہا ہے اور خطے کے امن کو چیلنج کر رہا ہے اگر بھارتی ہٹ دھرمی جاری رہتی ہے تو اس کا نقصان پورے خطے کو بھگتنا پڑے گا پھر یہ دو نیو کلیئر طاقتوں کی پنجا آزمائی ہوگی جس سے صرف خطے کو نہیں پورے دنیا کو اپنی لپیٹ میں لے گی ، فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ دنیا کو اپنا کردارادا کرنا ہو گا اور آگے بڑھنا ہو گا جبکہ اقوام متحدہ کی اپنی قرار دادیں اور فیصلے ہیں اس پر متکبر اور گھمنڈ کے نشے میںچور بھارت کو اقوام متحدہ نے اپنے فیصلوں کا تابع بنانا ہے ، پاکستان میں تھینک ٹینک کے کردار کو موثر کرنے کی ضرورت ہے انہوں نے کہا کہ عوام سے عوام کے تعلقات قائم کرنے میں وہ اپنا کردار ادا کر رہے ہیں لیکن حکومت کے حکومت سے کردار کیلئے میڈیا کا کردار بہت اہم ہے ، میڈیا میں چلنے والی چند سیکنڈز کی تصویریں اور فوٹیز موثر ہتھیار ثابت ہوتی ہیں انہوں نے کہا کہ وقت آگیا ہے کہ انفرادی کاموں کی بجائے سب مل کر کام کریں پاکستان میں کام کرنے والی انسانی حقوق کی چمپئن تنظیمیں کشمیر کے مسئلے پر خاموش دکھائی دیتی ہیں جبکہ پاکستان کے وہ نام جیسے ملالہ یوسف زائی اور شرمین عبید چنائے جو پاکستان کا منفی چہرہ دکھانے پر ایوارڈز حاصل کرتی رہی ہیں لیکن آج کشمیر میں حقیقی مظالم اور انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں اور نا انصافیوں پر خاموش ہے ان کی جانب سے بھارتی خلاف ورزیوں پر بھی ڈاکومنٹری بننی چاہئے دنیا کے سامنے ملالہ یوسف زئی کے منہ سے بار بار کشمیریوں پر ہونے والے مظالم بیان ہونے چاہئے ، انہوں نے کہا کہ ایسی بین الاقوامی تنظیمیں جو پاکستان کا منفی چہرہ کو ا جاگر کرتی ہے لیکن آج ہندوستان کا منفی اور سیاہ چہرہ ان کو سامنے لانے کی بھی ضرورت ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں