افغان طیاروں کی شادی تقریب پر بمباری 58افراد ہلاک یا زخمی

لشکر گاہ افغانستان کے جنوبی صوبے ہلمند میں گزشتہ رات افغان طیاروں نے ایک گھرپر بمباری کردی، جہاں شادی کی تقریب ہورہی تھی،ابتدائی اطلاعات میں مرنے یا زخمی ہونے والوں کی تعداد نہیں بتائی گئی تاہم مقامی ذرائع نے بتایا ہے کہ اس حملے میں کئی شہری مرد عورتیں اور بچے مارے گئے ہیں،تفصیلات کے مطابق ضلع موسیٰ قلعہ میں حملوں کے دوران کنجک گائوں میں 18انتہاپسند ہلاک یا زخمی ہوئے جبکہ افغان طیاروں کے دوسرے حملے میں جو شاہ وا حارث میں شادی کی ایک تقریب پر کیاگیا،چالیس سے زیادہ افراد ہلاک یا زخمی ہوگئے،اس میں مرنے والے تمام شہری تھے ،دریں اثناء صوبائی حکومت نے ایک بیان جاری کیا ہے جس میں بتایا ہے کہ ایک اور حملے میں چھ غیر ملکی انتہاپسندوں سمیت14انتہاپسند مارے گئے جن میں طالبان کے تین اہم کمانڈر بھی شامل ہیں۔یہ خصوصی اپریشن افغان فضائیہ نے موسیٰ قلعہ کے علاقے میں کیا ہے،تاہم صوبائی حکومت نے تمام حکام سے کہا ہے کہ وہ شادی کی تقریب پر ہونے والے حملے کی مکمل تحقیقات کریں،صوبہ ہلمند پوست کی کاشت کے باعث خاصہ بدنام ہے،تاہم یہاں طالبان کا کنٹرول مضبوط ہے،چند روزقبل بھی نیٹو فورسز کے فضائی حملے میں مونگ پھلی کے کھیتوں میں کام کرنے والے تیس افراد ہلاک اور کئی زخمی ہوگئے تھے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں