کرپشن کے تدارک اور کرپٹ عناصر کی نشاندہی میں عوام کا تعاون ناگزیر ہے، ڈی جی نیب بلوچستان

کوئٹہ (این این آئی) ڈائریکٹر جنرل قومی احتساب بیورو بلوچستان فرمان خان جمعرات کودن 2 سے 3 بجے کے درمیان کرپشن سے متعلق عوامی شکایات کی شنوائی کے لئے کھلی کچہری لگائیں گے۔ڈی جی نیب بلوچستان نے کرپش کے خاتمے میں عوام کے تعاون کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ نیب کے قانون این اے او 1999 کے دائرہ کار میں آنے والی تمام شکایات پر قانون کے مطابق فوری کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ کرپشن کی نشاندہی کرنے والے یا متاثرہ افراد کرپشن سے متعلق معلومات اور شکایات مکمل شواہد کے ساتھ نیب کے ریجنل آفس میں ڈی جی نیب کے روبرو پیش کر سکتے ہیں۔ عوام الناس کی راہنمائی کے لئے مطلع کیا جاتا ہے کہ ایسے جرائم جو نیب کے دائرہ کار میں آتے ہیں جیسے سرکاری خزانے کو کسی فرد یا ادارے کی طرف سے نقصان پہنچایا گیا ہو، سرکاری اختیارات کا غلط استعمال کر کے مالی فوائد حاصل کئے گئے ہوں، عوام الناس سے دھوکہ دہی کی گئی ہو، بینکوں، مالیاتی اداروں اور حکومتی واجبات کی دانستہ عدم ادائیگی کا ارتکاب کیا گیا ہو یا عوامی عہدے داروں اور سرکاری ملازمین اپنے مالی وسائل سے آعلی زندگی گزاررہے ہوں اور ناجائز اثاثے بنائے ہوں، ایسی تمام شکایت پر فوری اقدامات اٹھائے جائیں گے۔ تاہم سائیلین سے کہا گیا ہے کہ کھلی کچہری میں زاتی نوعیت کے مسائل لانے کے بجائے عوام الناس سے دھوکہ دہی سے متعلق کیسز سمیت سرکاری خزانے کو لوٹنے والے عناصر کی نشاندہی کی جائے۔ اس ضمن میں شکایت کنندگان سے کہا گیا ہے کہ و اپنی شناختی کارڈ کی کاپی اور شکایت کی بابت دستاویزی ثبوت ساتھ لائیں۔ کھلی کچہری کا انعقاد چئیرمین نیب جسٹس جاوید اقبال کی خصوصی ہدا یت پر تمام ریجنل آفسز میں ہر ماہ کی آخری جمعرات کو کیا جاتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں