بھارت میں مسلمان نشانے پر ہیں، عالمی برادری اس پر لازمی ایکشن لے، وزیراعظم عمران خان کا مطالبہ

اسلام آباد (این این آئی)وزیر اعظم عمران خان نے بھارت میں ہونے والے فسادات میں مسلمانوں کو نشانہ بنائے جانے پر عالمی برداری سے لازمی ایکشن لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہندوستان میں مقیم 200 ملین (20 کروڑ) مسلمان نشانے پر ہیں، عالمی برادری کیلئے کچھ کرنے کا بلاشبہ یہی وقت ہے۔ٹوئٹر پر جاری بیان میں وزیراعظم عمران خان نے پاکستان کے شہریوں کو بھی پیغام دیا اور کہا کہ آگاہ رہو! پاکستان میں اگر کسی نے بھی غیر مسلم شہریوں پر ہاتھ اٹھانے کی کوشش کی یا کسی عبادت گاہ کی جانب بری نظر سے دیکھا تو نہایت سختی سے پیش آئیں گے، ہماری اقلیتیں اس ملک کی برابر کی شہری ہیں۔وزیراعظم نے گزشتہ برس اقوام متحدہ میں اپنے خطاب کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ’گزشتہ برس اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے اپنے خطاب میں، میں نے پیش گوئی کی تھی کہ ایک مرتبہ جن بوتل سے نکل آیا تو خونریزی میں شدت آئے گی، کشمیر آغاز تھا، آج ہندوستان میں مقیم 200 ملین (20 کروڑ) مسلمان نشانے پر ہیں، عالمی برادری کیلئے کچھ کرنے کا بلاشبہ یہی وقت ہے۔وزیراعظم عمران خان نے کہاکہ آج ہم جوہری صلاحیت کی حامل ایک ارب سے زائد انسانوں پر مشتمل ریاست بھارت کو نازی ازم کی وارث آر ایس ایس کے ہاتھوں میں گرتا دیکھ رہے ہیں، نفرت کی بنیاد پر نسل پرستانہ نظریات کا حامل گروہ جب بھی غالب آتا ہے، قتل و غارت گری اور خونریزی کے دروازے کھل جاتے ہیں۔واضح رہے کہ بھارت میں متنازع شہریت کے قانون کے خلاف نئی دہلی میں احتجاج کرنے والے مسلمانوں پر بھارتی ہندو انتہا پسند جماعت بی جے پی کے غنڈوں نے حملہ کیا جس کے بعد نئی دہلی میں فسادات پھوٹ پڑے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں